بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 22 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

قبر پر فاتحہ خوانی کا طریقہ


سوال

 قبر پر فاتحہ خوانی جائز ہے یا نہیں ؟اور فاتحہ خوانی کا صحیح طریقہ کیا ہے؟

جواب

اہل سنت والجماعت کے عقیدے کے مطابق ایصال ثواب کے لیے قبر پر یا غائبانہ طور پر قرآن کریم پڑھنا جائز ہے،  اور اس کا  فائدہ و ثواب مردے کو پہنچتا ہے، قبر پر فاتحہ خوانی بھی اسی حکم میں داخل ہے، لیکن اس کا کوئی مخصوص طریقہ سنت سے ثابت نہیں،  بہتر ہے کہ ایک بار سورہ فاتحہ اور تین بار سورہ اخلاص یا سورہ یسین  یا  حسب سہولت واستطاعت قرآن کریم کا کوئی بھی حصہ پڑھ کر اس کاثواب مردے کو  بخش دیاجائے۔ فقط  واللہ اعلم 


فتوی نمبر : 143811200031

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے