بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 18 جولائی 2019 ء

دارالافتاء

 

فرائض کے بعد ہاتھ اٹھا کر دعا کرنا


سوال

سوال مختصر ہے اور جواب بھی مختصر عنایت فرما دیجیے۔ کیا نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم ہر فرض نماز کے بعد ہاتھ اٹھا کر دعا مانگا کرتے تھے اور کیا تمام مقتدی اول سے آخر اس دعا میں شریک ہوتے؟

جواب

فرض نماز کے بعد ہاتھ اٹھاکر دعا کرنا آپ ﷺ سے ثابت ہے، اور فرض کے بعد آپ ﷺ نے دعا کی ترغیب بھی دی ہے، اس سلسلے میں جو  مختلف روایات منقول ہیں وہ  فرض نمازوں کے بعدہاتھ اٹھاکراجتماعی دعاکے ثبوت واستحباب کے لیے کافی ہیں، لیکن یہ لازم اور ضروری بھی نہیں ہے۔فقط واللہ اعلم

تفصیل کے لیے درج ذیل لنک پر فتوی ملاحظہ فرمائیں:

فرض نماز کے بعد اجتماعی دعا کا حکم

فرائض کے بعد اجتماعی دعا بدعت نہیں


فتوی نمبر : 144008201038

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے