بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

عورت کے سامنے عورت کا کیا ستر ہے؟


سوال

عورت دوسری عورت کا کتنا جسم دیکھ سکتی ہے؟

جواب

اگر فتنہ اور شہوت کا خوف نہ ہوتو ایک مسلمان عو رت  دوسری مسلمان عورت کی ناف اور گھٹنے کے درمیانی حصہ کے علاوہ تمام بدن دیکھ سکتی ہے۔ غیر مسلم عورت یا فسق و فجور میں مبتلا مسلمان عورت یا ایسی عورت جو دوسروں کے سامنے پوشیدہ جسم کی صفات بیان کرے ان کے سامنے مسلمان عورت کو پیٹ، پیٹھ، سینہ، پنڈلیاں بھی چھپانا ضروری ہوگا۔

در مختار میں ہے :

’’( وتنظر المرأة المسلمة من المرأة كالرجل من الرجل ) وقيل: كالرجل لمحرمه، والأول أصح، سراج.  ( وكذا ) تنظر المرأة ( من الرجل ) كنظر الرجل للرجل ( إن أمنت شهوتها فلولم تأمن أو خافت أو شكت حرم استحساناً كالرجل هو الصحيح في الفصلين، تاترخانية معزياً للمضمرات‘‘. (6/371) فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144010200946

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے