بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 19 اکتوبر 2019 ء

دارالافتاء

 

عقیقہ کی شرعی حیثیت


سوال

عقیقہ کی شرعی حیثیت کیا ہے؟

جواب

عقیقہ فقہ حنفی کی رو سے  شرعاً مستحب ہے، واجب یا سنتِ موکدہ نہیں، جن کتابوں میں سنت لکھا ہے اس سے مراد سنتِ غیر مؤکدہ ہے جو مستحب ہی کے قائم مقام ہے۔

 رد المحتار على الدر المختار (6/ 336)
" يستحب لمن ولد له ولد أن يسميه يوم أسبوعه، ويحلق رأسه، ويتصدق عند الأئمة الثلاثة بزنة شعره فضةً أو ذهباً، ثم يعق عند الحلق عقيقةً إباحةً على ما في الجامع المحبوبي أو تطوعاً على ما في شرح الطحاوي، وهي شاة تصلح للأضحية، تذبح للذكر والأنثى، سواء فرق لحمها نيئاً أو طبخه بحموضة أو بدونها 
 مع كسر عظمها أو لا، واتخاذه دعوة أو لا، وبه قال مالك".
فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909202375

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے