بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 22 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

عفیفہ مہوش نام رکھنا اور عرفیت میں عبرہ پکارنا


سوال

ہمارے ہاں لڑکی ہوئی ہے،  کیا ہم ’’عفیفہ مہوش‘‘  نام رکھ سکتے ہیں؟ اور عرفیت میں ’’عبرہ‘‘  پکار سکتے ہیں؟  

جواب

’’عفیفہ‘‘  کا معنی ہے: پاک دامن.  ’’مہوش‘‘  کا معنی ہے: چاند جیسی، لہذا یہ نام رکھ سکتے ہیں۔ اور ’’عبرہ‘‘ (عین کے اوپر زبر) کا معنی ہے: ایک آنسو۔  اور اگر عین کے نیچے زیر ہو تو اس کا معنی ہے: عبرت، نصیحت ، اس نام سے بچی کو پکارنا مناسب نہیں۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144012200095

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے