بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 22 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

عذر کی وجہ سے مستقل طور بچہ دانی بند کروانا


سوال

میری بہن کے ہاں 5 بچے ہیں3 حمل ضائع ہوچکے ہیں، تیسرا حمل جب ضائع ہوا تو خون بہت ضائع ہوگیا ہے جس کی وجہ سے جان کو خطرہ تھا، اب بھی خون کی شدید کمی ہے اور کمزوری بھی بہت ہے، اب اگر ہم  بچہ دانی بند کروانا چاہیں تو کیا حکم ہے؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں مستقل بنیاد پر  آپریشن کرکے بچہ دانی  نکلوانا یا نس بندی کروانا یا کوئی ایسا طریقہ اپنانا جس سے توالد وتناسل   (بچہ پیدا کرنے) کی صلاحیت بالکل ختم ہوجائے ، شرعاً اس کی اجازت نہیں ہے، البتہ جب تک مکمل صحت نہیں ہوجاتی اس وقت تک  حمل سے بچنے کی  معالج کے مشورہ سے جائز تدابیر اختیار کی جا سکتی ہیں، اس طور پر کہ  جب چاہیں انہیں چھوڑ کر دوبارہ توالد و تناسل کا سلسلہ جاری رکھا جاسکتا ہو۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144003200024

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے