بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 23 مئی 2019 ء

دارالافتاء

 

شوہر کی عدم موجودگی میں ساس سسر کی خدمت کرنا


سوال

بیوی شوہر کے ہوتے ہوئے اپنی ساس سسر کی خدمت کرے یہ ثواب ہے، شوہر 40 دن یا 4 ماہ  کے لیے جماعت میں جائے تو شوہر کے نہ ہوتے ہوئے بیوی اپنی ساس سسر کی خدمت کرے تو کیا گناہ ہوگا ؟

جواب

شوہر کی عدم موجودگی میں بیوی کے لیے ساس سسر کی خدمت کرنا باعثِ ثواب ہے، لیکن بیوی کو  اس پر مجبور نہیں کیاجاسکتا، نیز جوان بہو کا سسر کے ساتھ تنہائی میں رہنا درست نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909202160

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں