بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 22 اکتوبر 2019 ء

دارالافتاء

 

سید لڑکے کا غیر سید لڑکی سے یا سید لڑکی کا غیر سید لڑکے سے نکاح کرنا


سوال

کیا غیر سید مرد کا سادات میں نکاح کرنا درست ہے؟ اسی طرح غیر سیدہ عورت کا سادات میں نکاح؟

جواب

سید لڑکے کا غیر سید لڑکی سے نکاح کرنا بہرصورت جائز ہے۔ اور  سیدہ لڑکی کا نکاح ولی کی اجازت سے غیر سید مسلمان  لڑکے سے بھی جائز ہے۔

البتہ اگرعاقلہ وبالغہ سیدہ لڑکی  اپنے ولی کی اجازت کےبغیر غیر سید لڑکے سے نکاح کرے تو  نکاح منعقد ہوجائےگا،لیکن  اگر لڑکا  اس لڑکی کا کفو نہ ہو (یعنی قریش کے علاوہ دیگر عرب قبیلہ کا یا عجمی قوم میں سے ہو) اور  ولی کو اس پر اعتراض ہوتو اولاد ہونے سے پہلے ولی بذریعہ عدالت اس نکاح کو ختم کروا سکتا ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008202048

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے