بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 21 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

سونا بینک میں گروی رکھ کر قرضہ لینا


سوال

سونا بینک میں گروی رکھ کر بینک سے رقم لینا جائز ہے یا نہیں؟

جواب

  بینک سے قرض لے کر جو اضافی رقم دی جاتی ہے وہ سود ہے، جس  کا لینا ، دینا شرعاً ناجائز اور حرام ہے، بینک عموماً جو قرض دیتا ہے  وہ سراسر سود پرمشتمل ہوتا ہے، خواہ کوئی چیز گروی رکھوا کر لیا جائے یا بغیر گروی رکھے لیا جائے، اس لیے بینک سے قرضہ لینا جائز نہیں ہے۔

اعلاء السنن میں ہے:

"قال ابن المنذر: أجمعوا علی أن المسلف إذا شرط علی المستسلف زیادةً أو هديةً فأسلف علی ذلك  إن أخذ الزیادة علی ذلك ربا".(14/513، باب کل قرض جر  منفعۃ، کتاب الحوالہ، ط: ادارۃ القرآن) فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144001200764

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے