بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 شوال 1440ھ- 16 جون 2019 ء

دارالافتاء

 

روزے کی حالت میں کلی کرتے ہوئے پانی حلق میں چلے جانا


سوال

روزے کی حالت میں کلی کرتے ہوئے غلطی سے  تھوڑا سا پانی حلق میں چلاے جائے اور واپس پانی کو اوپر لانے کی کوشش کی،  مگر یقین نہیں پانی واپس باہر آیا یا نہیں ، تو روزے کا کیا حکم ہے؟

جواب

کلی کرتے وقت پانی غلطی سے حلق میں چلا گیا اور  روزہ یاد تھا تو روزہ فاسد ہوگیا، قضا لازم ہے، کفارہ لازم نہیں ہے، اگر کلی کے دوران روزہ یاد نہیں تھا تو روزہ فاسد نہیں ہوگا۔

الفتاوى الهندية (1/ 202)
'' وإن تمضمض أو استنشق فدخل الماء جوفه إن كان ذاكراً لصومه فسد صومه، وعليه القضاء، وإن لم يكن ذاكراً لا يفسد صومه، كذا في الخلاصة، وعليه الاعتماد''.
فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200170

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے