بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 اکتوبر 2019 ء

دارالافتاء

 

رجب کا چاند دیکھ کر پڑھی جانے والی دعا ”اللھم بارک لنا فی رجب وشعبان وبلغنا رمضان“  کا حکم


سوال

رجب کا چاند دیکھ کر پڑھی جانے والی دعا  ”اَللّٰهُمَّ بَارِکْ لَنَا فِيْ رَجَبَ وَشَعْبَانَ وَبَلِّغْنَا رَمَضَانَ“  سنداً صحیح ہے یا ضعیف؟ اور اس کی نسبت آپ صلی اللہ علیہ کی طرف کرنا کیساہے؟ 

جواب

مذکورہ روایت معنی اور مفہوم کے لحاظ سے درست ہے، اور اکابرین کا اس پر عمل بھی ہے، لہذا اسے پڑھ لینا چاہیے،  البتہ اس حدیث کی سند میں محدثین کو کلام ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144007200140

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے