بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 19 اکتوبر 2019 ء

دارالافتاء

 

خراب انڈا کپڑے پر لگ جائے تو کیا حکم ہے؟


سوال

 خراب انڈہ  کپڑوں  لگ جائے  تو کپڑا ناپاک ہوگا؟

جواب

اگر خراب انڈے سے مراد یہ ہے کہ  مرغی کے انڈا دیتے وقت اس کے چھلکے پر جو تری  ہوتی ہے وہ کپڑے پر لگ گئی تو شرعاً اس کا حکم یہ ہے کہ  یہ پاک ہے، اگر کپڑوں پر لگ جائے تو کپڑے ناپاک نہیں ہوں گے۔

اور اگر مراد یہ ہے کہ انڈا اندر سے خراب ہوگیا ہے اور اس میں خون پیدا ہوگیا ہے اور وہ کپڑوں پر لگ گیا تو اس کا حکم یہ ہے کہ وہ ناپاک ہے، اگر کپڑوں پر لگ جائے تو اس جگہ کو پاک کرنا ضروری ہوگا۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (1/ 349):
"وكذا البيضة، فلا يتنجس بها الثوب ولا الماء إذا وقعت فيه، لكن يكره التوضؤ به للاختلاف".

الفتاوى الهندية (1/ 62):
"إذا صلى وفي كمه بيضة مذرة قد حال مخها دماً جازت صلاته، وكذا البيضة التي فيها فرخ ميت. كذا في فتاوى قاضي خان.

في النصاب: رجل صلى وفي كمه قارورة فيها بول لاتجوز الصلاة سواء كانت ممتلئة أو لم تكن؛ لأن هذا ليس في مظانه ومعدنه بخلاف البيضة المذرة؛ لأنه في معدنه ومظانه وعليه الفتوى. كذا في المضمرات".  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144004200702

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے