بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 اکتوبر 2019 ء

دارالافتاء

 

بیٹے کا نام رکھنے کی راہ نمائی


سوال

میرا نام اویس ہے، اور مجھےاللہ پاک نے 15 جون کو بیٹے کی نعمت سے نوازا ہے ،  برائے مہربانی مجھے اس کے لیے کوئی نام بتائیں!

جواب

آپ انبیاءِ کرام  علیہم السلام یا صحابہ کرام رضی اللہ عنہم اجمعین کے ناموں میں سے کسی بھی نام پر اپنے بیٹے کا نام رکھ لیں، مثلاً محمد، عبد اللہ، عبدالرحمٰن وغیرہ۔ اگر آپ اپنے نام کے وزن پر اپنے بیٹے کا نام رکھنا چاہتے ہیں تو آپ عزیر یا اسید یا خبیب نام بھی رکھ سکتے ہیں، ہماری ویب سائٹ پر بھی ناموں کے سیکشن میں بہت سارے اچھے اچھے نام موجود ہیں، حرف اور جنس منتخب کرکے ان میں سے بھی کوئی نام منتخب کرسکتے ہیں۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144010200198

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے