بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 اکتوبر 2019 ء

دارالافتاء

 

بیمار پرندے کو بلی کے سامنے ڈالنا/ بیمار پرندے کو ذبح کرنا


سوال

میرے پاس چھوٹے طوطے ہیں، ان میں سے کبھی کبھار کوئی پرندہ بیمار ہو جاتا ہے اور اس کی بیماری کا علاج بھی نہیں ہوتا اور دوسرے پرندوں کے لیے بھی بیماری کا باعث بنتا ہے .کیا ایسی صورت میں اس کو بلی کے سامنے ڈالنا یا ذبح کرنا جائز ہے؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں اگر بیمار طوطے /پرندے کا کوئی علاج نہیں تو ایسے  زندہ طوطے  کو بلی کے سامنے ڈالنے کی اجازت نہیں، تاہم اسے ذبح کرنا جائز ہے،  ذبح کے بعد اگر انسان کے لیے مضر صحت نہ ہو تو  کھا بھی سکتے ہیں، اور بلی کے سامنے بھی ڈال سکتے ہیں۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008200456

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے