بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 21 جولائی 2019 ء

دارالافتاء

 

بلا ضرورت قرض لینے سے اجتناب کرنا چاہیے


سوال

میری تنخواہ  10000 ہے اور میں 30000 قرض لے رہا ہوں، اس کے علاوہ  میرا خرچ میرے والد اٹھاتے ہیں، کیا مجھے پھر بھی قرض لینا چاہیے؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں جب آپ کی ضرورت آپ کے والد صاحب پوری کر دیتے ہیں تو ایسی صورت میں قرض لینے سے اجتناب کرنا چاہیے، البتہ اگر آپ کسی ضرورت کے لیے قرض لے رہے ہوں اور اُسے جلد ادا کرنے کی نیت بھی ہو تو قرض لے سکتے ہیں۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201491

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے