بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 27 مئی 2019 ء

دارالافتاء

 

باڈی اسپرے لگا کر نماز پڑھنا


سوال

باڈی سپر ے لگا کر نماز ہو جاتی ہے؟

جواب

اگر باڈی اسپرے میں الکوحل شامل نہیں تو اسے لگا کر نماز پڑھنے سے نماز ہوجاتی ہے، اور اگر باڈی اسپرے میں الکوحل ملا ہو ہو تو اس میں یہ تفصیل ہے  کہ  الکحل کی دو قسمیں ہیں: (1) ایک وہ جو منقیٰ، انگور، یا کھجور کی شراب سےحاصل کی گئی ہو،  یہ بالاتفاق ناپاک ہے، اس کا استعمال اور اس کی خریدوفروخت ناجائز ہے۔ (2) دوسری  وہ جو مذکورہ  بالا اشیاء کے علاوہ کسی اور چیز مثلا  جو، آلو، شہد، گنا، سبزی وغیرہ سے حاصل کی گئی ہو، اس کا استعمال اور اس کی خریدوفروخت جائز ہے۔

           مذکورہ تفصیل کی  رو سے صورتِ مسئولہ میں اگر باڈی اسپرے وغیرہ  میں استعمال ہونے والی الکحل منقیٰ ، انگور، یا کھجور سے حاصل کی گئی   ہے تو ایسے باڈی اسپرے  کا استعمال جائز نہیں ہے اور اس کو لگا کر نماز پڑھنے سے نماز بھی جائز نہیں ہوگی، اور اگر باڈی اسپرے وغیرہ میں  استعمال ہونے والی الکحل مذکورہ اشیاء کے علاوہ جو، آلو، شہد، گنا، سبزی وغیرہ سے حاصل کی گئی ہے تو ایسے باڈی اسپرے کا استعمال جائز ہے اور اس کو لگا کر نماز پڑھنے سے نماز ہوجائے گی۔

           عام طور پر  باڈی اسپرے اور پرفیوم وغیرہ میں جو الکحل استعمال ہوتی ہے وہ انگوریا کھجور وغیرہ سے حاصل نہیں کی جاتی، بلکہ  دیگر اشیاء سے بنائی جاتی ہے، لہذا  کسی چیز  کے بارے میں جب تک  تحقیق سے ثابت  نہ ہوجائے کہ اس  میں  پہلی قسم (منقیٰ، انگور، یا کھجور کی شراب )سے حاصل شدہ الکحل ہے ، اس وقت تک اس کے استعمال کو  ناجائز اور حرام نہیں کہہ سکتے، اور ایسا باڈی سپرے لگاکر نماز پڑھنا جائز ہے، تاہم اگر احتیاط پر عمل کرتے ہوئے اس سے بھی اجتناب کیا جائے تو یہ زیادہ بہتر ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200562

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں