بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 23 مئی 2019 ء

دارالافتاء

 

باپ کا اپنی بڑی بیٹی کو پیار کرنے سے نکاح کا حکم


سوال

 ایک شخص اپنے گھر میں دن کو دوپہر 3:00 بجے اپنے بچوں اور بیوی کی موجودگی میں اپنی بڑی بچی کو پیار کرتا ہے، اور عموماً گھر آتے وقت اکثر اپنے بچوں کو پیار کرتا رہتا ہے. ایک دن بیوی نے الزام لگایا کہ آپ نے بچی کو پیار کیا ہے ؛ اس لیے نکاح ختم ہو گیا ہے، اور میں تم پر حرام ہو چکی، اور شوہر بھی کوئی فاسق فاجر بھی نہیں ہے، نیک شریف انسان ہے، لہٰذا اس بارے میں جواب عنایت فرمائیں!

جواب

باپ اگر پدری شفقت کے تحت بچی کو پیار کرے تو اس سے نکاح ختم نہیں ہوتا، عوررت کا کہنا غلط ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143908200615

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں