بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

19 ذو الحجة 1440ھ- 21 اگست 2019 ء

دارالافتاء

 

ایک مسجد میں دوسری جماعت کرانا


سوال

میں قطر میں ہوتا ہو ں، اِدھر اکیلے نماز پڑھنے کو عیب سمجھا جاتا ہے.میرا سوال یہ ہے کہ جب جماعت ہوجائے تو اسی مسجد میں دوسری جماعت کراناکیسا ہے؟

جواب

          ایسی مساجدجومحلے کی مساجد ہوں وہاں دوسری جماعت کرانا مکروہ ہے۔اگر  کبھی جماعت رہ جائے تو مسجد کے ایسے حصے میں جو شرعی مسجد کے علاوہ ہو جماعت کروالیں۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143905200009

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے