بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 ذو الحجة 1440ھ- 19 اگست 2019 ء

دارالافتاء

 

ایک عورت کا حمل دوسری کے رحم میں منتقل کرنا


سوال

بیوی کا آپریشن کرکے شوہر کی ماں کا حمل اس بیوی  کے رحم میں ڈالا ہے تو اب کیا اس شوہر کو اس بیوی سے جماع جائز ہے؟

جواب

مذکورہ فعل شریعت کی رو سے جائز نہیں ہے،اولاد کے حصول کے لیے شریعت نے جو فطری طریقہ بتلایاہے یہ عمل اس کے خلاف ہے،نیز اس عمل میں شریعت کے کئی امور کی خلاف ورزی لازم آتی ہے۔البتہ جب تک بیوی کے پیٹ میں اس کی والدہ کا حمل موجود ہے، اس وقت تک شوہر کے لیے بیوی سے جماع جائز نہیں۔تفصیل کے لیے ملاحظہ ہو فتاوی بینات،جلد چہارم، کتاب الحظر والاباحۃ،ص:321 تا 326،مطبوعہ مکتبہ بینات بنوری ٹاؤن کراچی۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143905200053

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے