بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 26 مئی 2019 ء

دارالافتاء

 

ایک جانور میں سات سے کم افراد کا شریک ہونا


سوال

 اگر قربانی کے جانور کے سات  حصے نہ ہو رہے ہوں تو کیا چھ  لوگ مل کر قربانی کر سکتے ہیں جب کہ آخر میں یہ لوگ مساوی گوشت تقسیم کر لیں؟

جواب

بڑے جانور میں سات سے زیادہ حصے منع ہیں، پورے سات حصوں کا ہونا ضروری نہیں، لہذا صورتِ مسئولہ میں چھ افراد ایک جانور میں شریک ہوسکتے ہیں۔ پھر اگر چاہیں تو گوشت برابر برابر تقسیم کرلیں یا پھر سب مل کر کسی ایک شریک کو ساتویں حصے کا مالک بنادیں اور پھر وہ جس طرح چاہے اسے صرف کرے، یا وہ شریک ان سب کی طرف سے وہ حصہ کسی کے لیے ایصالِ ثواب کردے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909201895

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں