بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

21 ذو الحجة 1440ھ- 23 اگست 2019 ء

دارالافتاء

 

ایسی بکری جس کے تمام دانت جھڑ گئے ہوں اس کی قربانی کا کیا حکم ہے؟


سوال

ایک بکری جس کی عمر ۵ سال ہے، لیکن اب اس کا کوئی دانت موجود نہیں، کیا اس سے قربانی ہوسکتی ہے؟ اور کیا دانتوں کا بالکل نہ ہونا عیب تو نہیں؟ 

جواب

جس جانور کی عمر زیادہ ہونے کی وجہ سے سارے دانت گرگئے ہوں، لیکن اسے گھاس و چارہ کھانے میں دقت نہ ہوتی ہو تو اس کی قربانی جائز ہوگی. البتہ اگر وہ اچھی طرح سے گھاس نہ کھا سکتا ہو تو دانت کا جھڑنا منفعتِ  کامل نہ ہونے کی وجہ سےعیب شمار ہوگا اور اس کی قربانی جائز نہ ہوگی ؛ لہٰذا صورتِ  مسئولہ میں اگر مذکورہ بکری دانتوں کے بغیر چارہ  چر سکتی ہو تو اس کی قربانی جائز ہوگی، بصورتِ  دیگر قربانی جائز نہ ہوگی، جیساکہ ''فتاوی ہندیہ'' میں ہے:

''و أما الهتماء وهي التي لا أسنان لها، فإن كانت ترعی و تعلف جازت و إلا فلا''. (٥/ ٢٩٨، ط: رشيدية)فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144012200107

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے