بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 21 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

ایام تشریق کتنی مرتبہ سنت ہے


سوال

ایام تشریق میں تکبیرات تشریق ہر فرض نماز کے فورا بعد ایک پڑھنا واجب ہے۔ پریشانی اس میں ہے کہ بعض علماء کرام کہتے ہیں کہ تکبیرات تشریق تین بار پڑھنا سنت ہے اور بعض علماء کرام کہتے ہیں کہ تکبیرات تشریق صرف ایک بار پڑھیں وہی واجب، تین بار پڑھنا سنت نہیں۔ بتلائیں کہ ۱:ایام تشریق میں تکبیرات تشریق تین بار پڑھنا سنت ہے کہ نہیں؟ ۲:ایام تشریق میں تکبیرات تشریق کو سنت سمجھ کر تین بار پڑھنا ثواب ہے یا بدعت؟

جواب

تکبیرات تشریق کایک دفعہ پڑھناواجب ہے،ایک سے زائدمرتبہ پڑھنانہ لازم ہے نہ ہی مسنون ،البتہ اگرکوئی سنت سمجھے بغیرایک سے زائدمرتبہ بطورذکرکے پڑھناہے توکوئی حرج بھی نہیں،لیکن تین مرتبہ کوسنت نہیں کہاجاسکتا۔

فتاویٰ دارالعلوم دیوبند میں ہے کہ :

"تکبیرتشریق ایک دفعہ کہناواجب ہے،اس سے زیادہ واجب نہیں ہےدرمختارمیں عینی سے نقل کیاہے کہ زیادہ کہنے میں فضیلت وثواب ہے کچھ حرج نہیں ہے،لیکن شامی میں ابوالسعودسے نقل کیاہےکہ ایک مرتبہ سے زیادہ کہناخلاف سنت ہے پس بہتر ہے کہ ایک دفعہ پراکتفاء کیاجائے'' ۔

فتاویٰ رحیمیہ میں ہے:

تکبیرایک بارکہناواجب ہے،تین بارکہنامسنون نہیں،تین بارکہنے کاقول صحیح اورمفتیٰ بہ نہیں ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143612200017

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے