بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

5 ربیع الثانی 1440ھ- 13 دسمبر 2018 ء

دارالافتاء

 

انشورنس کروانا


سوال

’’اسٹیٹ لائف انشورنس‘‘ میں جو لوگ پالیسی کرواتے ہیں وہ جائز ہے یا ناجائز؟  اور جو روپے ان کو ملتے ہیں وہ بھی جائز ہیں یا نا جائز؟

جواب

کسی بھی قسم کا انشورنس کروانا جائز نہیں ، لہذا اس کمپنی میں بھی انشورنس کی پالیسی خریدنا جائز نہیں ہے۔ اگر کسی نے لاعلمی  میں  کروالی ہو تو فوراً اس کو ختم کروادیا جائے، اور اس پر جو پیسے ملتے ہیں اس میں سے صرف اس قدر رقم حلال ہے جتنی رقم جمع کروائی گئی ہو، نہ کہ اس سے زائد ۔  اگر یہ وصول ہو جائے تو اس کو بلا نیتِ ثواب صدقہ کرنا لازم ہے۔

اللہ تعالی کا ارشاد ہے:

اِنَّمَا الْخَمْرُ وَالْمَیْسِرُ وَالْاَنْصَابُ وَالْاَزْلَامُ رِجْسٌ مِّنْ عَمَلِ الشَّیْطٰنِ فَاجْتَنِبُوْهُ لَعَلَّکُمْ تُفْلِحُوْنَ.(المائدة) فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144003200225


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں