بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

21 شوال 1440ھ- 25 جون 2019 ء

دارالافتاء

 

الکوحل والے پرفیوم کے استعمال شدہ کپڑوں میں نماز کا حکم


سوال

اگر کوئی شخص ایلکوحل ملایا ہوا پرفیوم کپڑے پر استعمال کرے.اور اسی کپڑے سے نماز ادا کرے تو کیا اس کی نماز ادا ہوجائے گی؟

جواب

انگورو کھجور سے بنا ہوا الکوحل نجس ہے اور اس کا استعمال حرام ہے، جب کہ ان تین کے علاوہ دیگر اشیا سے بناہواالکوحل جب تک نشہ کی مقدار تک نہ پہنچے، نجس اور حرام نہیں۔ چونکہ پرفیوم میں عام طور پر استعمال ہونے والا الکوحل مذکورہ چیزوں سے کشید کیا گیا نہیں ہوتا ہے، ، اس بنا پر ایسے پرفیوم کا استعمال درست ہوگا اور اس پرفیوم کے استعمال شدہ کپڑے پاک رہیں گے۔ البتہ اگر کسی پرفیوم کے بارے میں یقینی طور پر معلوم ہو جائے کہ اس میں استعمال ہونے والا الکوحل انگور یا کھجور سے کشید ہے تو اس پرفیوم کا استعمال بالکل جائز نہیں ہوگا۔


فتوی نمبر : 143608200044

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے