بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 ذو الحجة 1440ھ- 19 اگست 2019 ء

دارالافتاء

 

اذان کے بعد کلمہ طیبہ پڑھنا


سوال

اذان کے بعد کلمہ طیبہ پڑھنا سنت ہے؟اور اس کا کوئی ثبوت ھے؟

جواب

اذان کے بعد کلمہ طیبہ پڑھنے کا ثبوت نہیں ہے،  اذان کے بعد جو ثابت ہے وہ  یہ ہے کہ پہلے دُرود شریف پڑھے پھر دُعائے وسیلہ(اذان کے بعد کی مشہور دعا) پڑھے،  پھر یہ دُعا پڑھے: ”رَضِیتُ بِاللہِ رَباً وَبِمحمدٍ صَلَّی اللہُ علیہ وَسلم نبیاً وَبِالْاِسْلَامِ دِیناً“ ۔(شرح النووی علی مسلم، ج: ۱، ص:۱۶۶، شامی، ج:۱، ص۳۹۸)  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143803200012

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے