بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 27 مئی 2019 ء

دارالافتاء

 

آدھی آستین والی قمیص میں نماز


سوال

ایک سوال کے جواب میں آپ نے کہا تھاکہ آدھی آستین والی قمیص پہن کر نماز مکروہ ہے ، کیا یہ حکم مردوں کے لیے بھی ہے؟

جواب

جی ہاں ،آدھی آستین والی قمیص پہن کر نماز پڑھنا مردوں کے لیے ہی مکروہ ہے نہ کہ عورتوں کے لیے۔ عورتوں کی نماز تو آدھی آستین والی قمیص میں ہوتی ہی نہیں، بلکہ اگر کسی خاتون نے ایسی قمیص میں نماز پڑھ لی، اور اس کی کلائیاں ڈھکی ہوئی نہ ہوں  تو اس نماز کو  لوٹانا ضروری ہوگا۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143908200349

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں