جامعہ علوم اسلامیہ
urdu arabic english

مجلس دعوت وتحقیق اسلامی

بانی ٴجامعہ حضرت مولانا بنوری رحمہ اللہ نے مختلف موضوعات پر تحقیقی وعلمی کام کے لئے ایک ادارہ "مجلس دعوت وتحقیق اسلامی "کے نام سے قائم کیا تھا،جس میں انہوں نے اپنے بے مثال علمی ذوق کی بناء پرہر قسم کے علوم وفنون سے متعلق قیمتی اور نادر کتب کا ذخیرہ بڑی محنت سے جمع فرمایا ، وسائل کی کمی کے باوجود سعودی عرب ،مصر، شام، ہندوستان اور دیگر کئی عرب وغیر عرب ممالک سے کتابوں کے حصول اور کراچی تک پہنچانے کی تدابیر اختیار فرمائیں ،جہاں کسی نایاب کتاب کے بارے میں معلوم ہوجاتا تو اس وقت تک سکون نہ پاتے جب تک کہ وہ کتاب یا اس کا عکس اپنے ادارہ کے لیے حاصل نہ کرلیتے ، جس کے نتیجے میں جامعہ کے عام کتب خانہ کے علاوہ ایک اورعظیم لائبریری وجود میں آئی ، جس میں ہزاروں مطبوعہ اہم کتابوں کے علاوہ کئی نایاب مخطوطات کا بیش قیمت علمی ذخیرہ بھی محفوظ ہے ،علماء، محققین اور مصنفین اس سے استفادہ کرتے ہیں،یہ لائبریری جامعہ سے ملحق ایک وسیع عمارت کی تین منزلوں میں قائم ہے۔

اس ادارہ سے "کشف النقاب عما یقولہ الترمذی وفی الباب "کے نام سے ایک منفرد اور عظیم کتاب کی پانچ جلدیں چھپ چکی ہیں، " کشف النقاب "حدیث نبوی کا ایک شاہکار اور علم حدیث کی وہ بے مثال خدمت ہے، جس کی ابتداء محدث العصر حضرت مولانا بنوری رحمہ اللہ نے "لب اللباب فیما یقولہ الترمذی وفی الباب"کے نام سے ۱۹۷۰ء میں کی تھی ،بعد میں انہوں نے یہ عظیم علمی کام مولانا ڈاکٹرمحمد حبیب الله مختارشہید رحمہ الله کی استعدادا وراہلیت کی بناء پر ان کے حوالہ کردیا ۔

یہ کتاب عرب وعجم میں یکساں مقبول ومتداول ہے اور مرجع کا کام دے رہی ہے، حضرت مولانا بنوری رحمہ اللہ فرمایا کرتے تھے، علم حدیث پر اب تک اتنا بڑا کام نہیں ہوا ہوگا، ان شاء الله اس کتاب کے باقی اجزاء بھی جلد زیور طبع سے آراستہ ہوجائیں گے۔